بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِيم

04-April-2020

افغان صدر کو قیدیوں کے تبادلے پرغور کرنا چاہئے، شاہ محمود قریشی

masooma mufferih masooma mufferih
74 Views 0 1 مہینہ
مساجد پر پابندی نہیں چاہتے، عوام کو قائل کرنے کی ضرورت، شاہ محمود
the news
Posted at 3 مارچ-2020

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ افغان صدر اشرف غنی کو طالبان قیدیوں کے تبادلے کے فیصلے پر غور کرنا چاہئے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے برطانوی خبر رساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ ماضی میں بھی قیدیوں کے تبادلے ہوتے رہے ہیں، اگر ایسا کرنے سے حالات ساز گار ہوتے ہیں تو افغان صدر اشرف غنی کو فراخدلی سے اس کے بارے میں سوچنا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ امن معاہدے کیلئے پاکستان نے مثبت کردار نبھایا ہے۔ اب اس کے بارے مین اگلا قدم اٹھانا افغان حکومت کا کام ہے ، اگلا قدم انٹرا افغان مذاکرات ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ قیدیوں کا تبادلہ قطر میں ہونے والے امن معاہدے میں موجود ہے، رہائی یکطرفہ نہیں ہوگی، دونوں طرف سے قیدی رہا ہوں گے، افغان قیادت کو لچک دکھانی چاہئے۔ معاہدہ کافی نہیں ہے بلکہ رویے بھی درست کرنا ہوتے ہیں۔ ماحول خراب کرنے والے لوگ ہمیشہ موجود ہوتے ہیں اور سیاسی قیادت کا کام ہے کہ ان کو ناکام بنائیں۔

انہوں نے کہا کہ امن کا راستہ ہمیشہ مشکل ہوتا ہے۔ مزاکرات میں بھی مشکلات تھیں مگر امید کرتے ہیں کہ دونوں فریقین معاہدے پر سختی سےعمل کریں گے۔ امن معاہدے پر امریکا نے صدر اشرف غنی کو اعتماد میں لیا اور ان سے مشاورت بھی کی گئی تھی۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ دوحہ میں اس وقت 6 رکنی افغان وفد موجود ہے جو قیدیوں کی رہائی سے متعلق بات کر رہا ہے۔ پاکستان قیدیوں کی رہائی کو فریقین میں اعتماد کی بحالی کی ایک کوشش کے طور پر دیکھ رہا ہے، قیدیوں کا تبادلہ یکطرفہ نہیں ہو گا بلکہ دونوں جانب سے قیدی رہا کئے جائیں گے۔

امن معاہدے کے تحت کتنے قیدیوں کا تبادلہ ہو گا؟

واضح رہے کہ 29 فروری کو قطر کے دارالحکومت دوحہ میں امریکا اور افغان طالبان کے درمیان 18 سال سے جاری جنگ کے خاتمے کیلئے تاریخی امن معاہدے پر دستخط کئے گئے ہیں۔

معاہدے کے تحت افغانستان سے امریکی اور نیٹو افواج کا انخلا آئندہ 14 ماہ کے دوران ہوگا جبکہ اس کے جواب میں طالبان کو ضمانت دینی ہے کہ افغان سرزمین دہشت گرد تنظیموں کے زیر استعمال نہیں آنے دیں گے۔

تاریخی امن معاہدے کے مطابق 5000 طالبان قیدیوں کی رہائی کے بدلے طالبان کے زیر حراست ایک ہزار قیدیوں کو 10 مارچ تک رہا کیا جائے گا لیکن افغانستان کے صدر اشرف غنی نے طالبان قیدیوں کو رہا کرنے سے انکار کردیا ہے۔

خیال رہے کہ ایک اندازے کے مطابق 10 ہزار طالبان افغانستان میں قید ہیں۔

افغان حکومت نے طالبان قیدیوں کو رہا کرنے کا وعدہ نہیں کیا

افغان صدر اشرف غنی کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت نے طالبان قیدیوں کو رہا کرنے کا وعدہ نہیں کیا، جیسا کہ امریکا اور طالبان کے درمیان ہونے والے امن معاہدے میں کہا گیا ہے قیدیوں کی یہ رہائی مزاکرات کی شرط نہیں ہو سکتی لیکن مذاکرات کا حصہ ضرور ہو سکتی ہے۔

انھوں نے کہا کہ کسی بھی قیدی کی رہائی امریکا کے اختیار میں نہیں ہے بلکہ افغان حکومت کے اختیار میں ہے۔


متعلقہ خبریں

فواد چوہدری پنجاب سے زیادہ سندھ حکومت سے متاثر

وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے سندھ…

5 دن
فواد چوہدری پنجاب سے زیادہ سندھ حکومت سے متاثر

مساجد پر پابندی نہیں چاہتے، عوام کو قائل کرنے کی ضرورت، شاہ…

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ اجتماعات کے معاملے پرعوام کوذہنی طورپرقائل کرنے کی ضرورت ہے۔…

1 ہفتہ
مساجد پر پابندی نہیں چاہتے، عوام کو قائل کرنے کی ضرورت، شاہ محمود

شاہ محمود قریشی سندھ حکومت سے متاثر

پاکستان تحریک انصاف کے نائب کپتان اور وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی پاکستان پیپلز پارٹی کی صوبائی…

1 ہفتہ
شاہ محمود قریشی سندھ حکومت سے متاثر

معیشت کی تباہی کورونا سے بھی بڑا خطرہ ہے، شہباز شریف

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہبازشریف کا کہنا ہے کہ ہمیں…

1 ہفتہ
معیشت کی تباہی کورونا سے بھی بڑا خطرہ ہے، شہباز شریف

تازہ ترین

اغوا اور قتل میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا ملنی چاہئے۔…

واشنگٹن۔ سندھ ہائیکورٹ کی جانب سے امریکی صحافی ڈینیئل پرل کے قاتلوں کی رہائی کے فیصلے پر امریکہ…

3 گھنٹے
اغوا اور قتل میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا ملنی چاہئے۔ ایلس ویلز

پاک افغان بارڈردوطرفہ کاروبار کیلئے کھولنے کا بڑا اعلان

پشاور۔ پاک افغان اعلٰی حکام نے درمیان آج مذاکرات کے بعد اتوار سے دوطرفہ تجارت کیلئے کھولنے کا…

3 گھنٹے
پاک افغان بارڈردوطرفہ کاروبار کیلئے کھولنے کا بڑا اعلان

کرونا مبتلا مریض کو غلط سفری معلومات دینوالے شخص کو قید کی…

کورونا وائرس چین کے شہر ووہان سے پھوٹنے کے بعد اب تک 204 ممالک میں رپورٹ ہو چکا…

4 گھنٹے

مذہبی سکالر طیبہ خانم بھی کرونا متاثرین کی مدد کیلئے سامنے آ…

اسلام آباد۔ کرونا متا ثرین کی مدد کیلئے مخیر حضرات نے آگے آ کر فنڈز جمع کرانے کا…

4 گھنٹے
مذہبی سکالر طیبہ خانم بھی کرونا متاثرین کی مدد کیلئے سامنے آ گئیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے