بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِيم

20-August-2019

کلبھوشن جادیو دہشت گرد ہے، عالمی عدالت نے فیصلہ سنا دیا۔

155 Views 0 1 مہینہ
Posted at 17 جولائی-2019

کلبھوشن یادیو کیس میں بھارت کو عالمی عدالت میں منہ کی کھانی پڑی، انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس نے بھارت کی جانب سے کلبھوشن یادیو کی رہائی کی درخواست رد کر دی اور کہا کہ کلبھوشن پاکستان میں دہشت گردی کا مرتکب پایا گیا ہے۔

کلبھوشن یادیو کیس میں عالمی عدالت نے فیصلہ سنا دیا۔ جس میں پاکستان کو بھارت کے خلاف کامیابی ملی ہے۔۔عالمی عدالت نے پاکستان کی فوجی عدالت کی جانب سے دی گئی سزا کو ختم کرنے اور کلبھوشن کی رہائی کی بھارتی درخواستوں کو رد کردیا تاہم ویانا کنونشن کے مطابق بھارت کو قونصلر رسائی دینے کی درخواست مان لی ہے۔

عالمی عدالت کا کہنا ہے کہ کلبھوشن کو بھارت کے حوالے نہیں کیا جا سکتا۔ پاکستان نے بھارت کو کلبھوشن یادیو کی بروقت گرفتاری کی اطلاع دی بلکہ ہائی کمشنر کو طلب کر کے احتجاج بھی ریکارڈ کرایا گیا جب کہ بھارت نے عدالت میں کلبھوشن کا اصلی پاسپورٹ بھی فراہم نہیں کیا۔ عدالت کے کہنا ہے کہ کلبھوشن پاکستان میں دہشت گردی کا مرتکب پایا گیا۔ اس لئیے وہ پاکستان ہی رہے گا جب کہ کلبھوشن یادیو کا اصلی نام حسین مبارک پٹیل قرار پایا۔

اس کیس میں بھارت کا موقف ہے کہ کلبھوشن بھارتی بحریہ کا سابق اہلکار ہے جسے پاکستان فوج نے ایران سے اغوا کیا۔ عالمی عدالت میں بھارتی وکلاء نے کلبھوشن کا کیس پاکستان کی سول عدالت میں چلانے کی استدعا کر رکھی ہے۔ پاکستانی وکلاء کا موقف تھا کہ کلبھوشن یادیو بھارتی بحریہ کا کمانڈر ہے جو بلوچستان میں دہشت گردی میں ملوث رہا اور رینگے ہاتھوں پکڑا گیا۔ واضح ثبوت کے بعد اسے موت کی سزا دی گئی ہے۔

پاک فوج نے بھارتی دہشت گرد کو 2016 میں بلوچستان کے علاقے سے گرفتار کیا تھا اور اپریل 2017 کو فوجی عدالت نے انہیں تخریب کاری اور دہشت گردی کے جرائم ثابت ہونے پر سزائے موت کا حکم دیا تھا مگر بھارت کی جانب سے درخواست دائر کرنے کے بعد عالمی عدالت نے پاکستان کو فیصلہ آنے تک سزائے موت پر عمل درآمد سے روک رکھا ہے۔ پاکستان اور بھارتی وکلاء کی جانب سے عالمی عدالت میں کلبھوشن یادیو پر بحث فروری 2019 میں ہوئی تھی جس کے بعد عالمی عدالت نے فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔

پاکستان اور بھارت آخری بار 1999 میں عالمی عدالت میں امنے سامنے آئے تھے۔ جب پاکستان نے بھارت کی جانب سے پاک بحریہ کے جہاز کو نشانہ بنانے کا معاملہ عالمی عدالت میں پیش کیا تھا۔ اس سانحہ میں 16 اہلکار شہید ہوئے تھے۔ عالمی عدالت نے یہ کہہ کر معاملہ نمٹا دیا کہ ایسے معاملات میں دخل اندازی کے وہ مجاز نہیں۔ یاد رہے کہ عالمی عدالت کلبھوشن یادیو پر جو بھی فیصلہ کرے اسے تسلیم یا عمل کرنا پاکستان کی مجبوری نہیں مگر دنیا میں بہتر امیج کے لئیے فیصلے کو ماننا سفارتی مجبوری ضروری ہوگا۔

متعلقہ خبریں

بھارتی جنگی طیارے پرانی گاڑیوں سے بھی برے…

بھارتی فضائیہ کے سربراہ نے اعتراف کیا کہ پاکستان کی نسبت ان کے جنگی جہاز ناکارہ ہیں، بولے…

49 منٹ

امرتیا سین نے کشمیر کا کشمیریوں کو قانونی…

نئی دہلی۔ کشمیر ایک ایسا ایشو ہے جو 72 سالوں سے پاکستان اور بھارت کے مابین وجہ تنازع…

8 گھنٹے
بھارتی دانشور نے کشمیر کا کشمیریوں کو قانونی حقدار قرار دے دیا

سونم کپور پراینٹی نیشنلسٹ کا لیبل

ممبئی۔ مودی کے مقبوضہ کشمیر کا خصوصی درجہ تبدیل کرنے کے فاشسٹ اقدام پر بھارت دو حصوں میں…

8 گھنٹے
سونم کپور پر اینٹی نیشنلسٹ کا لیبل

مسلمانوں کے قصائی کیلئے ابوظہبی کا سب سے…

گجرات کے قصائی مودی نے مقبوضہ کشمیر کا خصوصی درجہ تبدیل کیا تو اسے پاکستان کی جانب سے…

9 گھنٹے
یو اے ای کا مودی کو سب سے بڑا ملکی ایوارڈ دینے کا فیصلہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے