بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِيم

18-August-2019

دھونی فوجی دستانے نہیں بدلے گا، بھارت بضد

268 Views 0 2 مہینے
Posted at 9 جون-2019

بھارتی نے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی تنبیہہ ہوا میں اڑا دیا۔ بھارتی بورڈ بضد ہے کہ وکٹ کیپر مہندرا سنگھ دھونی بھارتی لوگو والے دستانے نہیں بدلے گے۔

آئی سی سی کی جانب سے مہندرا سنگھ کے دستانے بدلنے کے بیان کے بعد بھارتی عوام سیخ پا ہے۔ سوشل میڈیا پر بھارتی بورڈ پر دباؤ ڈالا گیا جس کے بعد کمیٹی آف ایڈمنسٹریٹر کے سربراہ ونود رائے نے بیان دیا کہ بھارت نے آئی سی سی سے اجازت مانگی ہے کہ مہندرا سنگھ دھونی کو دستانے پہننے کی اجازت دی جائے۔

بھارتی بورڈ کا کہنا ہے کہ آئی سی سی نے دھونی کو دستانے بدلنے کی ہدایت نہیں بلکہ درخواست کی تھی۔ آئی سی سی قوانین کے مطابق کوئی بھی کھلاڑی ورلڈ کپ میچ کے دوران کسی سیاسی، مذہبی یا فوجی پیغام کی تشہیر نہیں کر سکتا۔

بھارتی بورڈ کا موقف ہے کہ دھونی کے داستانے میں ایسی کوئی بات نہیں جس پر عتراض اٹھایا جائے۔ یہ بھارتی آرمی کے لوگو سے مماثلت نہیں رکھتا کیونکہ آرمی کے لوگو پر ایک لفظ بلیدان لکھا ہے جس کا مطلب قربانی کے مگر دھونی کے دستانے پر یہ لفظ نہیں ہے۔

جنوبی افریقہ کے خلاف میچ کے دوران دھونی نے وکٹ کیپنگ کرتے ایسے دستانے استعمال کئیے جس پر بھارتی آرمی کا لوگو تھا جس پر آئی سی سی نے انہیں دستانے ہٹانے کا کہا تھا۔ مہندرا سنگھ دھونی کو بھارتی فوج میں اعزازی لفٹیننٹ کرنل کا عہدہ بھی دیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں

بھارتی کرنل نے کشمیریوں پر ظلم ڈھانے کی…

سری نگر۔ مقبوضہ کشمیر کا خصوصی درجہ ختم کرنے کے بعد کشمیریوں پر مودی سرکار کے ظلم و…

8 منٹ
بھارتی کرنل نے کشمیریوں پر ظلم ڈھانے کی بجائے استعفٰی دے دیا

ترکی کا کشمیر پر سلامتی کونسل کے اجلاس…

انقرہ۔ ترکی پاکستان کا عظیم برادر دوست اسلامی ملک ہے۔ مشکل کی ہر گھڑی میں پاکستان کا ساتھ…

52 منٹ
ترکی کا کشمیر پر سلامتی کونسل کے اجلاس کا خیرمقدم

کشمیر میں کرفیو 14ویں روز میں داخل، کھانے…

سری نگر۔ مودی سرکار کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کا خصوصی درجہ ختم ہونے کو 14 روز گزر…

2 گھنٹے
کشمیر میں کرفیو 14ویں روز میں داخل، کھانے پینے کا شدید بحران

الیکشن کمیشن کے غیر فعال ہونے کا خدشہ

اسلام آباد۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان ایک آئینی ادارہ ہے۔ چیف الیکشن کمیشن اور چاروں صوبائی ممبران کی…

2 گھنٹے
الیکشن کمیشن کے غیر فعال ہونے کا خدشہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے