بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِيم

25-August-2019

انسانیت ہار گئی، پیسہ جیت گیا

268 Views 0 3 مہینے
Posted at 7 جون-2019

سماجی رابطے کی ویب سائیٹ پر وائرل ہونے والی ویڈیو دیکھ کر میرے رونگتے کھڑے ہوگئے جس میں کوئٹہ کے رہائشی عطا محمد کہہ رہا تھا میری موت کا ذمہ دار میرے ماں باپ نہیں ہیں لہذا انھیں میرے مرنے کے بعد کچھ نہ کہا جائے میں حالات اور بیروزگاری سے تنگ آکر خودکشی کر رہا ہوں عطا محمد یہ سب اپنے علاقائی زبان میں کہہ رہا تھا ابھی میں وہ ویڈیو دیکھ ہی رہی تھی مجھے موبائل پر پیغام آیا کہ کوئٹہ کے رہائشی نے 2 بچوں اور بیوی کو گولی مارنے کے بعد خود کشی کر لی ہے اور وہ شخص کوئی اور نہیں وہی شخص تھا جس کی ویڈیو دیکھ رہی تھی ۔ یہ بات ہمارے ضمیروں کو اٹھانے کے لیے کافی ہو گی کہ جہاں عید کے دوسرے روز لوگ خوشیاں منا رہے تھیں ۔۔ دعوتیں کر رہے تھے وہی ایک شخص بھوکا پیاسا بیٹھا زندگی اور موت میں سے ایک چیز چننے کا فیصلہ کر رہا تھا

جہاں لوگ ایک دوسرے سے عید گلے مل رہے تھے وہی عطا محمد نے اپنے اور اپنے بیوی بچوں کے لیے موت کو گلے لگانا بہتر سمجھا۔ جہاں لوگ افطاریوں، دعوتوں اور شاپنگ پر لاکھوں روپے اڑا رہے تھے وہی عطا محمد اپنے بچوں کو ایک وقت کی روٹی دینے کے لیے کبھی کسی ہمسائے کا تو کبھی کسی امیر کا منہ دیکھ رہا تھا ۔

عطا محمد کے بچے

سٹیٹ بینک اور دیگر اداروں کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق پاکستانیوں نے شاپنگ اور دعوتوں پر تقریبا ایک ہزار ارب روپے خرچ کیے ہیں جبکہ عیدی کے لیے کڑک دار 4 ارب کے نئے نوٹ نکلوائے ہیں

ہم وہ قوم ہے جیسے ہی رمضان آتا ہے زکوٰۃ کٹوتی سے بچنے کے لیے بینک سے پیسے نکلوا لیتے ہیں کہ کسی غریب کا بھلا نہ ہو جائے ۔ ہم ہوٹلنگ میں ایک وقت کے کھانے پر ہزاروں روپے خرچ کر لے گئیں لیکن سڑک پر بیٹھے بچے کو 20 روپے روٹی کے لیے دینے کی ہمت نہیں ہوتی

ہم وہ قوم ہے جیسے ہی رمضان آتا ہے زکوٰۃ کٹوتی سے بچنے کے لیے بینک سے پیسے نکلوا لیتے ہیں کہ کسی غریب کا بھلا نہ ہو جائے ۔ ہم ہوٹلنگ میں ایک وقت کے کھانے پر ہزاروں روپے خرچ کر لے گئیں لیکن سڑک پر بیٹھے بچے کو 20 روپے روٹی کے لیے دینے کی ہمت نہیں ہوتی

عطا محمد کا بچوں اور بیوی کو قتل کرنا صرف تین معصوم جانوں کا قتل نہیں بلکہ وہ نام نہاد انسانیت پر طمانچہ مار رہا ہے اور عطا محمد کی خود کشی صرف خود کشی نہیں بلکہ ہمارے مردہ ضمیروں کو کٹہرے پر لا کر جھنجوڑنے کا زریعہ ہے۔

غربت کی وجہ سے مرنے والوں کی موت ،موت نہیں بلکہ ہماری بے حسی، مردہ دل ،سوئے ہوئے ضمیر ، اور آنے والے زوال کی داستان ہے

متعلقہ خبریں

خضدار میں قبائلی رہنما سمیت 4 افراد قتل

کوئٹہ۔ بلوچستان میں امن و امان کی صورتحال پر پاک فوج نے بڑی حد تک قابو پا لیا…

1 ہفتہ
خضدار میں قبائلی رہنما سمیت 4 افراد قتل

کوئٹہ پھر دہشت گردی سے لہو لہو

کوئٹہ۔ سلامتی کونسل میں پاکستانی موقف کو پذیرائی ملنے پر بھارت ایک مرتبہ پھر اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر…

1 ہفتہ
دھماکے میں 4 افراد شہید اور 23 زخمی ہو گئے

ڈاکٹرز اور طبی عملے کی غفلت سے زچہ…

مظفر گڑھ۔ ڈی ایچ کیو ہسپتال مظفر گڑھ میں لیڈی ڈاکٹر اور طبی عملے کی مبینہ غفلت کی…

1 ہفتہ
ڈاکٹرز اور طبی عملے کی غفلت سے زچہ و بچہ جاں بحق

راولپنڈی میں گھر آئی گرل فرینڈ کو نوجوان…

راولپنڈی۔ جوں جوں انسان ترقی کی منازل طے کر رہا ہے۔ اخلاقی اعتبار سے پستی کی طرف بھی…

1 ہفتہ
راولپنڈی میں گھر آئی گرل فرینڈ کو نوجوان نے قتل کر ڈالا

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے