بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِيم

24-July-2019

عمرہ کرکے واپس آنیوالے دو افراد علامہ اقبال ائرپورٹ پر دن دیہاڑے قتل

79 Views 0 3 ہفتے
عمرہ کر کے واپس آنیوالے دو افراد کو ذاتی دشمنی کی بنا پر دن دیہاڑے قتل کر دیا گیا
Posted at 3 جولائی-2019

لاہور۔ علامہ اقبال ائرپورٹ سیکیورٹی کے اعتبار سے حساس ترین علاقہ ہے۔ یہاں سیکیورٹی فورسز کی جانب سے فول پروف انتظامات کے دعوے کئے جاتے ہیں مگر بدقسمتی سے آج ایک مرتبہ پھر یہ دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے۔ ذاتی دشمنی کے نتیجے میں عمرہ کر کے واپس لوٹنے والے دو افراد کو دن دیہاڑے قتل کر دیا گیا۔

فائرنگ کے بعد ائرپورٹ سیکیورٹی فورسز نے ملزمان کو حراست میں لے لیا۔ ائرپورٹ ذرائع کا کہنا ہے کہ جدہ سے آنیوالی فلائٹ سے نفیس جٹ اور زین جٹ عمرہ کر کے واپس پہنچے۔ سوا دس بجے انٹرنیشنل آمد کے لاؤنج سے باہر نکلنے گئے تو انہیں کیا پتہ تھا کہ موت ان کے سامنے کھڑی ہے۔ ائرپورٹ سیکیورٹی فورس کا کہنا ہے کہ دو ملزمان ارشد اور شان نے انتہائی قریب سے مقتولین پر فائر کھول دئیے جس سے وہ موقع پر ہی جاں بحق ہو گئے۔

Courtesy Dawn

نفیس جٹ اور زین کا نام پیپلز پارٹی کے رہنما بابر بٹ کے قتل میں لیا جاتا تھا

باخبر ذرائع کا کہنا ہے کہ نفیس جٹ اور زین کا نام پیپلز پارٹی کے رہنما بابر بٹ کے قتل میں لیا جاتا تھا اور قاتلوں نے اسی دشمنی کی بنا پر نفیس اور زین جٹ کو موت کے گھاٹ اتارا۔ بابر بٹ کے قتل کی 2017ء میں درج ہونیوالی ایف آئی آر میں عاطف جٹ، عرفان جٹ اور عاطی جٹ نامزد ہیں۔ بابر بٹ قتل کیس میں اس وقت کے مسلم لیگی ایم این اے سہیل شوکت بٹ کو بھی نامزد کیا گیا تھا۔

Courtesy Express

مقتولین کو نشانہ بنانے کے بعد ملزمان نے فرار ہونے کی کوشش کی

مقتولین کو نشانہ بنانے کے بعد ملزمان نے فرار ہونے کی کوشش کی تاہم انہیں ائرپورٹ سیکیورٹی فورسر نے دھر لیا۔ عوامی حلقوں میں یہ بات موضوع بحث بنی ہوئی ہے کہ ائرپورٹ جیسے حساس علاقے میں دن دیہاڑے فائرنگ سے دو افراد کا قتل سیکیورٹی کے ناقص انتظامات پر سوالات چھوڑ گیا۔ سیکیورٹی انتظامات کے باوجود ملزمان اسلحہ لیکر انٹرنیشنل فلائٹ کے موقع پر لاؤنج کیسے پہنچ گئے۔

ملزمان کی کسی بھی جگہ چیکنگ نہیں ہوئی

کیا ملزمان کی کسی بھی جگہ چیکنگ نہیں ہوئی۔ ڈیوٹی پر موجود اے ایس ایف اہلکاروں کہاں تھے؟ ائرپورٹ سیکنرز سے ملزمان کیسے گزر گئے۔ لاؤنج میں موجود اے ایس ایف اہلکاروں نے ملزمان کو کیوں نہ پکڑ۔ ان سوالات کے جوابات ملنا ابھی باقی ہے۔ وزیراعلٰٰی پنجاب سردار عثمان بزدار نے لاہور ائرپورٹ پر فائرنگ کے واقعہ کا سخت نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے رپورٹ طلب کر لی۔

انہوں نے حکم دیا کہ فائرنگ کے ذمہ داروں کیخلاف قانون کے تحت کارروائی کی جائے۔ واضح رہے اسی طرح کا ایک واقعہ 22 جنوری 2010ء میں ائرپورٹ حدود میں عارف حمید عرف ٹیپو ٹرکاں والا کا قتل ہوا تھا۔

متعلقہ خبریں

لاہور میں 19 سالہ ملازمہ کا بے رحمی…

لاہور کے علاقہ ماڈل ٹاؤن سے اغواء ہونے والی 19 سالہ گھریلو ملازمہ بازیاب نہ کرائی جا سکی…

9 گھنٹے

وعدہ خلافی کرنے پر لڑکی نے لڑکے کا…

لاہور کے قریب رائے ونڈ میں ایک خاتون نے شادی سے انکار پر نوجوان کو گولیاں مار دی…

13 گھنٹے

لاہور شہر کی سڑکوں پر گڑھے نظر نہیں…

وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے صوبائی دارالحکومت لاہور کی سڑکوں کو تعمیر و مرمت کی ہدایت کردی، حکام…

13 گھنٹے

سینیٹ کا اجلاس شروع ہونے کے کچھ منٹوں…

اسلام آباد۔ سب سے بڑا قانون ساز ادارہ سینیٹ کا اجلاس آج شروع ہونے کے کچھ ہی دیر…

17 گھنٹے
سینیٹ کا اجلاس شروع ہونے کے کچھ منٹوں بعد ہی ملتوی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے