بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِيم

18-August-2019

نیب کورٹ نے 26 جون تک حمزہ شبہاز کے جسمانی ریمانڈ کی منظوری دے دی

209 Views 0 2 مہینے
نیب کورٹ نے 26 جون تک حمزہ شبہاز کے جسمانی ریمانڈ کی منظوری دے دی
Posted at 12 جون-2019

لاہور۔ شریف خاندان کی مشکلات میں کمی کے بجائے روز بروز تیزی آ رہی ہے۔ کل پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن رہنما حمزہ شہباز کی لاہور ہائیکورٹ میں ضمانت کی درخواست مسترد کئے جانے پر نیب لاہور نے انہیں گرفتار کر کے نیب جیل میں بند کر دیا۔ آج نیب لاہور کی جانب سے حمزہ شہباز کے جسمانی ریمانڈ کیلئے انہیں احتساب عدالت میں پیش کی گیا۔

احتساب عدالت نے ان کا 26 جون تک جسمانی ریمانڈ منظور کر کے نیب کے حوالے کر دیا۔ نیب نے ان کے پندرہ روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی تھی۔ احتساب کورٹ کے جج جواد الحسن نے حمزہ شہباز کیخلاف منی لانڈرنگ اور آمدن سے زائد اثاوں کے کیس کی سماعت کی۔ نیب پراسیکیوٹر وارث جنجوعہ نے عدالت کو بتایا کہ کل حمزہ شہباز کو لاہائیکورٹ سے گرفتار کیا گیا۔

Courtesy Dunya Tv

احتساب کورٹ کے جج نے استفسار کیا کہ کیا ملزم عدالت میں موجودہے

احتساب کورٹ کے جج نے استفسار کیا کہ کیا ملزم عدالت میں موجودہے۔ اس پر وکیل نے بتایا کہ حمزہ شہباز کمرہ عدالت میں موجود ہے۔ جج نے استفسار کیا کہ کیا ان کو انکی گرفتاری کی وجوہات بتائی گئی ہیں۔ نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ حمزہ کو گرفتاری کی وجوہات فراہم کی گئی ہیں۔ نیب وکیل نے مزید کہا کہ حمزہ شہباز کے بنک اکاؤنٹس سے مشکوک منتقلی ہوئی ہیں۔ سن 2003ء میں ان کے اثاثے سوا دو کروڑ تھے۔

Courtesy Express Tv

جو نوٹس جاری کئے گئے ان میں حمزہ کیخلاف کافی مواد منسلک کیا

نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ ہائیکورٹ میں ضمانت کیس میں تمام مواد فراہم کر دیا گیا ہے جو نوٹس جاری کئے گئے ان میں حمزہ کیخلاف کافی مواد منسلک کیا گیا ہے، بنک اکاؤنٹ، رقوم منتقلی اور جن لوگوں نے رقوم بھیجی ان کی تمام تر تفصیلی فراہم کیں۔ قانون میں گرفتاری کی وجوہات کا کہا گیا ہے جو فراہم کیں۔ حمزہ کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ نیب پہلے منی لانڈرنگ اور پھر اثاثوں کا ذکر کرتا ہے۔

نیب جس مواد پر انحصار کر رہا ہے وہ آج تک ملزم کو فراہم نہیں کیا

منی لانڈرنگ ایکٹ 2010ء میں موجود ہے جس کا اس سے پہلے کے معاملات پر اطلاق نہیں ہوتا،۔ منی لانڈرنگ کا لفظ سیاسی پوائنٹ سکورنگ کیلئے شریف خاندان کو بدنام کرنے کیلئے کیا جا رہا ہے۔ نیب جس مواد پر انحصار کر رہا ہے وہ آج تک ملزم کو فراہم نہیں کیا گیا۔ اگر ہمارے پاس وہ مواد ہی موجود نہیں ہے تو اپنا دفاع کیسے کریں گے۔

اس پر ملزم کا ریمانڈ لیا جائے مگر شواہد فراہم نہ کئے جائیں۔ حمزہ شہباز کے وکیل نے مزید کہا کہ میرا موکل پاکستان کے سب سے بڑے صوبے کا اپوزیشن لیڈر ہے۔ موجودہ حکومت حمزہ شہباز اور ان کے خاندان کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنا رہی ہے۔ میڈیا میں جان بوجھ کر منی لانڈرنگ کا شوشہ چھوڑ کر عوام کے ذہنوں کو متاثر کرنے کی ناکام کوشش کی گئی۔

نیب نے پہلے 85 ارب کا الزام لگایا اب 18 کروڑ کا کہہ رہی ہے۔ حمزہ پر جس دور میں منی لانڈرنگ کا الزام لگایا گیا اس دور میں حمزہ شریف یا ان کا خاندان اقتدار میں نہیں تھا۔ حمزہ کے وکیل نے مزید کہا کہ نیب کا کہنا ہے کہ 2005ء سے 2009ء تک منی لانڈرنگ کی گئی۔ اس دور میں حمزہ کو شہر سے باہر جانے کی اجازت نہیں تھی۔

حمزہ ایک کاروباری گھرانے سے تعلق رکھتے ہیں اور اپنے دادا کا کاروبار سنبھالتے رہے ہیں۔ انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ حمزہ کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست مسترد کر دی جائے۔ واضح رہے نیب لاہور نے حمزہ کو کل لاہور ہائیکورٹ سے گرفتار کیا، ان پر منی لانڈرنگ اور غیر قانونی اثاثے بنانے کا الزام ہے۔

متعلقہ خبریں

قاضی فائزعیسٰی کیخلاف صدارتی ریفرنس چیلنج

اسلام آباد۔ جسٹس قاضی فائز عیسٰی کیخلاف صدارتی ریفرنس سپریم جوڈیشل کونسل میں بھجوائے جانے پر ملک کی…

22 گھنٹے
قاضی فائز عیسٰی کیخلاف صدارتی ریفرنس چیلنجز

خضدار میں قبائلی رہنما سمیت 4 افراد قتل

کوئٹہ۔ بلوچستان میں امن و امان کی صورتحال پر پاک فوج نے بڑی حد تک قابو پا لیا…

23 گھنٹے
خضدار میں قبائلی رہنما سمیت 4 افراد قتل

لاہور پولیس حراست میں ملزم کی ہلاکت

لاہور۔ لوئر مال پولیس سٹیشن کی حوالات میں بند ملزم پراسرار طور پر جاں بحق ہو گیا۔ شان…

24 گھنٹے
لاہور پولیس حراست میں ملزم کی ہلاکت

کوئٹہ پھر دہشت گردی سے لہو لہو

کوئٹہ۔ سلامتی کونسل میں پاکستانی موقف کو پذیرائی ملنے پر بھارت ایک مرتبہ پھر اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر…

1 دن
دھماکے میں 4 افراد شہید اور 23 زخمی ہو گئے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے