بِسمِ اللہِ الرَّحمٰنِ الرَّحِيم

20-June-2019

لاہورہائیکورٹ نے چار بچے والد سے لیکر ماں کے حوالے کر دئیے

116 Views 0 4 ہفتے
لاہور ہائیکورٹ نے چار بچے والد سے لیکر ماں کے حوالے کر دئیے
Posted at 24 مئی-2019

لاہور۔ بچے والدین کے تعلق کو جوڑنے میں بائینڈنگ فورس کا کام دیتے ہیں لیکن والدین کی ناچاقی کا سب سے زیادہ اثر کم سن بچوں پر پڑتا ہے۔ ماں اور باپ کو الگ الگ پیمانوں میں تولنا ان کیلئے ممکن نہیں ہوتا۔ آج ایسا ہی منظر لاہور ہائیکورٹ میں دیکھنے میں آیا جب عدالت عالیہ نے چار بچے والد سے لیکر ماں کے حوالے کرنے کے احکامات جاری کئے تو بچوں نے ماں کے ساتھ جانے سے انکار کر دیا۔

خاوند ثاقب سعید نے دوسری شادی کر لی ہے

وہ احاطہ عدالت میں بلک بلک کر روتے رہے۔ زاہدہ پروین نامی خاتون نے اپنے بچوں کی حوالگی کی لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کر رکھی تھی۔ اس درخواست پر جسٹس فاروق حیدر نے سماعت کی۔ درخواست گزار خاتون نے استدعا کی تھی کہ اس کے خاوند ثاقب سعید نے دوسری شادی کر لی ہے اور اس سے بچے بھی چھین لئے ہیں۔

اس نے اپنی درخواست میں استدعا کی تھی کہ بچوں کی ماں سے بہتر اور کوئی پرورش نہیں کر سکتا۔لہٰذا بچوں کی نگرانی اس کے سپرد کی جائے۔ اس کے شوہر نے موقف اختیار کیا کہ اسکی اہلیہ خود گھر چھوڑ کر گئی تھی۔ عدالت نے فریقین کے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد چاروں بچے ماں کے حوالے کر دئیے۔

متعلقہ خبریں

آج دفاعی چیمپئن آسٹریلیا کو بنگلہ دیش کے…

لندن۔ ورلڈکپ 2019ء جوں جوں آگے بڑھا رہا ہے۔ اس کے درجہ حرارت میں مزید تیزی آ رہی…

5 گھنٹے
آج دفاعی چیمپئن آسٹریلیا کو بنگلہ دیش کے چیلنج کا سامنا

کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں پانچ ارب سے زائد…

کراچی۔ معیشت ایک پیچیدہ اعدادوشمار کا کھیل ہے۔ ایک لکیر آگے پیچھے کرنے سے اربوں کا خسارہ کم…

6 گھنٹے
کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں پانچ ارب سے زائد کی کمی

مودی کا پاکستان سے جامع مذاکرات کیلئے وزیراعظم…

اسلام آباد۔ پاکستان ہمیشہ سے ہی پاک بھارت مذاکرات اور خطے کے امن کا حامی رہا ہے مگر…

7 گھنٹے
مودی کا پاکستان سے جامع مذاکرات کیلئے وزیراعظم عمران خان کو جوابی خط

برطانیہ کا پاکستان کے ساتھ برآمدات کا حجم…

لندن۔ برطانیہ اور پاکستان کے درمیان گہرے دوستانہ تعلقات ہیں۔ اب دونوں ممالک کے درمیان تجارتی روابط بھی…

7 گھنٹے
برطانیہ کا پاکستان کے ساتھ برآمدات کا حجم ایک بلین ڈالر بڑھانے کا اعلان

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے